کوہاٹ پولیس نے اعلیٰ کوالٹی چرس کی سمگلنگ ناکام بنا دی

کوہاٹ پولیس نے کروڑوں مالیت کی منشیات کراچی سمگل کرنے کی کوشش ناکام بنادی 

انڈس ہائی وے پر کارروائی کے دوران چرس سے بھری ٹرک پکڑ کر پولیس نے منشیات کے بین الصوبائی سمگلر کو بھی گرفتار کرلیا ہے۔

پولیس ترجمان کے مطابق پکڑی جانے والی 208کلو گرام وزنی اعلیٰ کوالٹی چرس کی کل مالیت کروڑوں روپے بتائی جا رہی ہے جو ٹرک کے خفیہ خانوں میں چھپا کر ضلع کرم سے کوہاٹ کے راستے سندھ کے دارالحکومت کراچی سمگل کی جارہی تھی۔

ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر کوہاٹ کیپٹن(ر)واحد محمود نے منشیات سمگل کرنے کی کوشش ناکام بنانے کی پولیس کاروائی کے حوالے سے بتایا کہ انہیں اطلاع ملی تھی کہ بین الصوبائی منشیات سمگلر نیٹ ورک کے ارکان کسی بھی وقت منشیات کی بھاری کھیپ سمگل کرنے کی کوشش کرینگے۔

اطلاع کی تصدیق کی بعد انہوں نے اے ایس پی صدر دانیال احمد جاوید کی سربراہی میں ایس ایچ او تھانہ جرما قسمت خان، اے ایس آئی مبارک حسین اور دیگرپولیس نفری پر مشتمل خصوصی ٹیم تشکیل دی۔ڈی پی او کے مطابق پولیس کی اس ٹیم نے انسدادی کارروائی کے طور پر کوہاٹ انڈس ہائی وے پر مسلم آباد پولیس چیک پوسٹ میں ناکہ بندی کرکے گاڑیوں کی سخت چیکنگ شروع کررکھی تھی کہ اس اثناء میں ایک مشکوک ٹرک نمبر بنوں E-2371کوتلاشی کی غرض سے روک لیا گیا۔

پولیس  نے تلاشی کے دوران ٹرک کی پچھلی باڈی میں بنائے گئے خفیہ خانوں میں انتہائی مہارت سے چھپائی گئی مجموعی طور پر 208کلو گرام اعلیٰ کوالٹی کی چرس برآمد کرکے ٹرک میں سوار منشیات کے بین الصوبائی سمگلر عبدالرحمان ولد گلات خان سکنہ ضلع کرم کو گرفتار کرلیا

ڈی پی او کوہاٹ کیپٹن(ر)واحد محمود نے بتایا کہ چرس سے بھری ٹرک سمیت حراست میں لئے گئے منشیات سمگلر کو فور ی طور پر تھانہ جرما منتقل کردیا گیا جہاں انکے خلاف کروڑوں مالیت کی چرس سمگل کرنے کے جرم میں مقدمہ درج کرلیا گیا ہے۔

انہوں نے بتایا کہ منشیات سمگلر نے ابتدائی پوچھگچھ کے دوران پکڑی گئی چرس قبائلی ضلع کرم سے کراچی سمگل کرنے کا اعترف جرم کرلیا ہے۔

ڈی پی او کے مطابق زیر حراست ملزم سے منشیات سمگلر نیٹ ورک کے بارے میں مزید تفتیش جاری ہے جسے بے نقاب کرکے مزید کاروائی عمل میں لانے کیلئے ضلع کرم کی پولیس حکام کیساتھ مربوط حکمت عملی طے کی جائے گی

ملزم کوبعد ازاں مقامی عدالت کے سامنے پیش کرکے جسمانی ریمانڈ حاصل کرنے کے بعد انہیں تفتیشی ٹیم کے حوالے کردیا گیا ہے۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.