پولیس بے چاری کیا کیا کرے؟

کوہاٹ

ضلعی پولیس کے ترجمان فضل نعیم کی جانب سے منگل کے روز جاری ہونے والی ایک پریس ریلیز کا متن ہے کہ ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر کوہاٹ کیپٹن(ر)واحد محمود نے عوامی شکایات کا فوری نوٹس لیتے ہوئے جیل روڈ سے ریڑھیاں ہٹانے کا حکم دیدیا ہے۔ڈی پی او نے بازاروں سے تجاوزات ختم کرنے کی بھی وارننگ جاری کردی ہے۔اس حوالے سے ضلعی پولیس سربراہ نے منگل کے روز پرانا جیل روڈ، زنانا ڈگری کالج روڈ،مرغی منڈی روڈ اور اندرون شہر واقع پرانا سبزی وفروٹ منڈی کا اچانک دورہ کیا اور انہوں نے مزکورہ مقامات میں آمدورفت کی صورتحال کا تفصیلی جائزہ لیتے ہوئے شہریوں کی تکالیف کے ازالے کیلئے روڈ کو کشادہ رکھنے کی ہدایات جاری کردیں۔دورے کے دوران ڈی پی او نے پرانا جیل روڈ پر غیر قانونی قبضہ جمائے ریڑھی بانوں کوفی الفور ہٹا نے اور ان ریڑھیوں کوپراناسبزی و فروٹ منڈی کے اندر منتقل کرکے محدود رکھنے کا حکم دیدیا۔ضلعی پولیس سربراہ نے اندرون شہر تمام روٹس کو عوامی آمدورفت کیلئے صاف وکشادہ رکھنے اور شہر کے تمام بازاروں سے ناجائز تجاوزات فوری طور پر ختم کرنے کی بھی تنبیہ جاری کردی ہے۔ضلعی پولیس سربراہ نے شہر کے مرکزی بازار سے متصل مقامی روٹس خصوصاً ڈگری کالج روڈ،پرانا جیل روڈ اورمرغی منڈی روڈ پر عوامی رش کے تناظر میں مقامی پولیس کی موبائل،رائیڈر و پیادہ گشت تسلسل سے جاری رکھنے اور آمدورفت کی مد میں عوام کو زیادہ سے زیادہ ریلیف فراہم کرنے کیلئے ان روٹس پر ٹریفک وارڈنز کی خدمات بھی حاصل کرنے کی ہدایات جاری کردی ہیں۔اس موقع پر ڈی پی او کیپٹن(ر)واحد محمود نے کوہاٹ شہر کی تاجر برادری سے بھی اپیل کی وہ شہر کے بازاروں کو صاف ستھرا اور کشادہ رکھنے میں اپنا کردار ادا کریں اور بازاروں سے ناجائز تجاوزات رضا کارانہ طور پر ختم کرنے اور شہر کی ٹریفک نظام کو منظم رکھنے میں پولیس انتظامیہ کا بھر پور ساتھ دیں۔شہر کے بازاروں،مصروف چوراہوں اور مقامی روٹس کے دورے کے موقع پر ڈی ایس پی سٹی سرکل عالم زیب اور ایس ایچ او تھانہ سٹی قسمت خان بھی ڈی پی او کے ہمراہ تھے جنہیں اس مسئلے کا مستقل حل تلاش کرنے کیلئے متعلقہ انتظامی اداروں کیساتھ ملکر مشترکہ کام کرنے کی ہدایات جاری کردی گئی ہیں۔

یاد رہے کہ گذشتہ رمضان المبارک میں پرانا جیل روڈ پر ضلعی انتظامیہ کی جانب سے سستا بازار لگا کر ریڑھی بانوں کو سستا بازار میں کھڑا کر دیا لیکن رمضان کا ختم ہونے کے بعد ریڑھی بانوں دوبارہ آذاد چھوڑ دیا گیا جوکہ شہریوں کے لئے درد سر بن گئے ہیں جس سے تنگ آکر عوام نے ضلعی پولیس سربراہ کو اپنی شکایات سے آگاہ کرنا شروع کر دیا اور پولیس سربراہ نے ان شکایات کی روشنی میں کارروائی کی ہے۔

اس حوالے سے بعض تجزیہ کاروں کے مطابق پولیس کی یہ کارروائی ایک طرف تو ستائش کے قابل ہے تو دوسری طرف ضلعی انتظامی افسران کی کمزوری طرف بھی اشارہ کرتی ہے۔

عوام یہ بھی شکایت کرتی ہے کہ کوہاٹ کے مرکزی بازار کی سڑک کا آدھے سے زائد حصہ تجاوزات اور تہہ بازاری کی نذر ہو چکا ہے لیکن ابھی تک کسی بھی ڈپٹی کمشنر اور دیگر متعلقہ ذیلی افسران نے ان دکانداروں کو اپنی دکانوں تک محدود نہیں کیا، اس لئے متعلقہ معاملے پر بھی پولیس سربراہ کو ایکشن لینا چاہئے تاکہ عوام کو اس عذاب سے چھٹکارا مل سکے۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.