ملک بھر میں سرد موسم اور برفباری نے 83 افراد کی جان لے لی

اسلام آباد
ملک کے مختلف علاقوں میں شدید برفباری اور سرد موسم کے باعث اموات کی تعداد 83 تک پہنچ چکی ہے
قدرتی آفات کے مرکزی ادارے یا این ڈی ایم اے نے مظفر آباد آذاد کشمیر میں سرد موسم اور برفباری سے 55 شہریوں کی اموات واقع ہو جانے کی تصدیق کی ہےاین ڈی ایم اے یا نیشنل ڈیزاسٹر منیجمنٹ کے ترجمان کی جانب سے جاری ہونے والے ایک بیان کے مطابق مظفر آباد آذاد کشمیر میں برفانی تودہ گرنے سے 19 افراد جاں بحق ہوگئے ہیں جبکہ دس افراد ابھی تک لاپتہ ہیں۔ ترجمان کے مطابق چار مزید زخمیوں کو ملبے سے نکال لیا گیا ہے۔
دوسری جانب ادارے کے صوبائی سربراہ احمد رضا قادری کے مطابق مظفر آباد میں برفباری سے منہدم ہونے والی عمارت کے ملبے سے 49 لاشیں نکال لی گئی ہیں۔
صوبائی سربراہ کے مطابق سرد موسم اور برفباری کے باعث امدادی ٹیموں کی کارروائیاں متاثر ہو رہی ہیں۔
ادھر بلوچستان میں خراب موسم کے باعث سینکڑوں مسافر ٹریفک میں پھنس چکے ہیں۔
لیوی ذرائع کے مطابق پانچ سو سے زیادہ مسافر قلعہ سیف اللہ کے علاقہ کان مہتارزائی میں خراب موسم کے باعث پھنسے ہوئے ہیں ، جہاں کا درجہ حرارت منفی چودہ درجہ سنٹی گریڈ تک پہنچ چکا ہے۔جبکہ درجنوں گاڑیاں بھی برف تلے دب گئی ہیں۔
صوبائی حکومت کے احکامات کی روشنی میں بلوچستان کے سات اضلاع میں ایمرجنسی نافذ کی گئی ہے جو کہ خراب موسم اور برفباری کے باعث زیادہ متاثر ہوئے ہیں۔

چترال اور گلگت بلتستان سے موصولہ اطلاعات کے مطابق دونوں علاقوں میں ریکارڈ برفباری ہوئی ہے اور گلگت بلتستان میں برفباری کا پچاس سالہ ریکارڈ ٹوٹ چکا ہے۔
گلگت بلتستان کے علاقوں ہنزہ اور نگر میں گذشتہ 36 گھنٹوں سے زندگی کو منجمد کردینے والی سردی کے باعث ایمرجنسی نافذ کی گئی ہے۔ْ
دوسری جانب نیشنل ہائی وے اتھارٹی یا قومی شاہراؤں کے مرکزی ادارے نے شہریوں کو پہاڑی علاقوں میں سفر سے گریز کرنے کا کہا ہے۔
دوسری جانب سرکاری ذرائع کے مطابق آذاد کشمیر کی وادی نیلم میں برفبادی تودے گرنے کے مختلف واقعات میں دو خواتین سمیت کم از کم پانچ افراد برف تلے زندہ دب گئے ہیں واقعات میں تین افراد زخمی بھی ہوئے۔

avalanche#
snowfall#

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.